شوہر شاہ نواز کے ہاتھوں قتل ہونے والی صحافی ایاز میر کی بہو سارہ انعام کے والدین اب کہاں پہنچے ہیں،بڑی خبر آ گئی

اسلام آباد:اسلام آباد میں شوہر شاہ نواز کے ہاتھوں قتل ہونے والی صحافی ایاز میر کی بہو سارہ انعام کی میت لینے کے لیے ان کے اہلِ خانہ ہسپتال پہنچ گئے۔مقتولہ سارہ انعام کی میت 6 دن سے پمز کے سرد خانے میں موجود ہے۔سارہ انعام کے بھائی اور کزن ان کی میت لے کر شہزاد ٹاؤن جائیں گے۔آج نمازِ ظہر کے بعد سارہ انعام کی نمازہِ جنازہ ادا کی جائے گی جس کے بعد انہیں مقامی قبرستان میں سپردِ خاک کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ جمعہ 23 ستمبر کو اسلام آباد کے علاقے چک شہزاد میں سینئر صحافی ایاز امیر کے بیٹے شاہ نواز نے نہایت سفاکی سے اپنی اہلیہ سارہ کو ڈمبل کے وار کر کے قتل کر دیا تھا۔ملزم شاہ نواز کو پولیس نے جائے واردات سے گرفتار کر لیا تھا۔ملزم کی والدہ ثمینہ شاہ اور والد ایاز امیر کو مقتولہ سارہ کے چچا اور چچی نے بطور ملزم نامزد کیا تھا، جس کے بعد ایاز امیر کو اعانتِ جرم کی دفعہ 109 میں گرفتار گرفتار کر لیا گیا تھا۔

اسلام آباد کی عدالت نے ایاز امیر کو گزشتہ سماعت کے موقع پر ایک روز کے جسمانی ریمانڈ پر پولیس کی تحویل میں دیا تھا۔گزشتہ روز ریمانڈ ختم ہونے پر ایاز امیر کو عدالت میں پیش کیا گیا جہاں پولیس نے ان کے مزید جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی۔سینئر سول جج نے عدم ثبوت کی وجہ سے ایاز امیر کو مقدمے سے ڈسچارج کرنے کا حکم دے دیا تھا۔عدالت کے حکم کے بعد شہزاد ٹاؤن پولیس نے ایاز امیر کو رہا کر دیا گیا تھا۔